3 comments for “The Discovery of India – Tarek Fatah chats with Tahir Gora of TagTV after his four-month stay in Hindustan

  1. Tarek Fatah
    May 24, 2015 at 10:18 AM

    Please try again. This should work.

  2. shri
    May 24, 2015 at 3:50 PM

    میں نے آپ مکمل interview دیکھا. مے کہنا چاہوں گا بھارت میں 4 month رہنے کے بعد بھی بهوت سی چیزیں آپ سمجھ نہیں پائے.
    جیسے آپ نے کہا بھارت میں bagladesh کے لئے نفرت ہے because وہ سیاہ اور کم hight کے ہے.
    آپ غلط ہے .. 5 کروڑ سے زیادہ بنگلہ دیشی بھارت میں غیر قانونی طریقے سے داخل ہوئے ہے.
    وہ یہاں رہتے ہیں فساد کرتے ہیں لوگوں کو مارتے ہیں. goverment جیسے کانگریس اور بنگال کی Mamata Banerjee ووٹ بینک کے لئے ان use کرتی ہے اور بھارت کا voter id card بنوا کے indian citizen بنوا دیتی ہے جس سے وہ لوگ ممتا بنرجی کو ووٹ دیتے رہے اور یہی کام کانگریس کرتی ہے.
    اور یہ لوگ انڈیا میں انڈین job پہ آ جاتے ہے جس کی real ہندوستانیوں کے ہے.
    يے لوگ minority reservation enjoy کرتے ہیں جو real indian minority کے لئے ہے. نتیجہ real indian minority کو reservation کا فائدہ نہیں ہوتا اور وہ اور زیادہ reservation مانگتے ہے اور اس سے general علامت کے لئے high education اور goverment job پانا زیادہ مشکل ہو گیا ہے.
    بنگلہ دیشیوں نے آکے آسام میں فسادات ریٹویٹ ہے اور وہ رہنے والے لوگو کے villages جلا دئے اور علامت (لوگو) کو مار ڈالا ہے.
    اور وہاں بنگلہ دیشی اور پاکستانی پرچم لگا دیے ہیں. یہ وجہ ہے کی انڈےنس میں bagladeshis کے لئے نفرت ہے. ساتھ ہی میٹرو سٹی میں بھی عورتوں کے ریپ ریٹویٹ ہے.
    جہا تک پاکستان کی بات ہے. یہاں بهوت سے لوگ ہیں جو پاکستان سے محبت جیسی باتیں کرتے ہیں.
    ایسی باتیں آج کل یہاں فیشن میں چل رہی ہے. لیکن جن کے پاس دماغ ہے وہ جانتے ہیں پاکستان پہ بھروسہ نہیں کیا جا سکتا.
    مے یہ اردو میں google translate سے لکھ رہا ہوں امید ہے سمجھ جائیں گے آپ.

  3. V S Kokje
    May 25, 2015 at 1:13 AM

    Frankness of your comments is astounding. Over-exposure to UP and Bihar seems to have blurred your sight to some extent. The Western states of India from Punjab, Haryana to Karnataka, Kerala have been quite orderly and have registered steady growth in economic as well as social parameters and the rich-poor divide in these states is not the same as in UP and Bihar. Even states like MP and Rajasthan have better record. I wish people like you should be recognised as Persons of Indian Origin so that they can visit India frequently on PIO cards.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*